الحاج صوفی سلیم بٹ الحاج صوفی کباب والے نے سرکاری حج پیکج سے سبسڈی کے خاتمے پر اظہار خیال کرتے ہوئے

گجرات (اقبال بھٹہ سے ) ممتاز سماجی وکاروباری ،مذہبی وروحانی شخصیت الحاج صوفی سلیم بٹ الحاج صوفی کباب والے نے سرکاری حج پیکج سے سبسڈی کے خاتمے پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ریاست مدینہ بنانے کے دعویداروں نے عام آدمی کا مدینہ جانا مشکل بنا دیا ،سرکاری حج پیکج سے سبسڈی کے خاتمہ سے نہ صرف غریب بلکہ متوسط طبقہ پر فریضہ حج کی ادائیگی سے محروم رہے گا پچھلے سال 275000 روپے تھے جبکہ موجودہ حکومت نے بڑھا کر 426000 کر دئیے ہیں جو ایک عام آدمی کی پہنچ سے بہت دور ہیں انہوں نے وزیر اعظم پاکستان عمران خاں سے درد مندانہ اپیل کی ہے کہ حج ارکان اسلام کا پانچواں اہم رکن ہے اور یہ ہر صاحب استطاعت پر زندگی میں ایک بار فر ض ہے لہٰذا حج کے اخراجات میں اس قدر اضافہ نہ کیا جائے کہ عام آدمی اس فریضہ کی ادائیگی سے قاصر رہے دوسری طرف عمرہ کے دوبارہ جانے پر بھی 2000 ریال کا ٹیکس لگا دیا ہے جس کی فرزندان توحید سخت بے چینی اور تذبذب کا شکار ہیں انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان عمران خاں اس اہم قومی مسئلہ کی طرف خصوصی توجہ فرمائیں اور حج اور عمرہ ظاہرین کیلئے خصوصی پیکیج کا بھی انتظام کریں تاکہ ایک عام مسلمان بھی عمرہ اور حج کی ادائیگی کیلئے جا سکیں جو آپ کیلئے خصوصی دُعائیں کریں گے اب عام آدمی کا حج پر جانے کا سوچنا بھی مشکل ہو گیا ہے انہوں نے کہا کہ کاروبار کے اور کئی ذرائع ہیں مذہبی فرائض کی بجاآوری میں کاروبار نہ کیا جائے بلکہ انہیں زیادہ سے زیادہ ریلیف دیا جائے تاکہ عام آدمی باآسانی حج وعمرہ کے فریضہ کو ادا کرسکے سابقہ حکومت جنہیں آپ چور ڈاکو اور نہ جانے کن کن القاب سے پکارتے ہیں انہوں نے تو حج پر سبسڈی دے رکھی تھی ہم آپ سے توقع کرتے ہیں کہ آپ اُن سے بھی زیادہ سبسڈی دیں تاکہ اسلامی جمہوریہ پاکستان صیح معنوں میں ریاست مدینہ بن جائے کہیں ایسانہ ہوکہ ریاست مدینہ بنانے کے دعوے دار عام آدمی کا مدینہ جانا ہی نہ ممکن بنا دیں اُنہوں نے وزیر اعظم پاکستان عمران خان سے اس مسئلہ کی طرف خصوصی توجہ دینے اور اسے حل کرنے کی دردمندانہ اپیل کی ہیں تاکہ ریاست مدینہ کے باسی بلا کسی روک ٹوک اور رکاوٹ کے آسانی کے ساتھ سفر مدینہ جاری رکھ سکیں ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More